Sad Poetry

وقت اپنی روانی میں دھلتا رہا،
میں تنہا تھا تنہا ہی چلتا رہا،
کبھی ہنستا تھا اپنی نصیبوں پائی،
کبی اندر ہی اندر میں جلتا رہا،
کہیں شکوے ملی سے کہیں ٹھوکرین،
چھوٹی ایسی لگن کے سنبھلتا رہا مائی،
ہم کو پانی کی خاطر سے سب کچھ کیا،
“دوست”
بس وہی سنگدل تھا جو راستی بدلتا رہا،

You Might Like This

Poetry

نہ جانے روٹھ کے بیٹھا ہے دل کا چین کہاںملے...

Read More

Poetry

بعد اُس کے غمِ ہجر میں, شریکِ غم کوئی نا...

Read More

Poetry

آنکھ میں آنکھ ڈال دیکھا ہےمیں نے سارا جمال دیکھا...

Read More
funny jokes

Funny joke

سردار جی کا نہایت خطرناک آپریشن ہونا تھا جب انہیں...

Read More

Leave a Reply